ایک عورت کے ھینڈ بیگ چوری ہونے کا دلچسپ واقعہ

ایک عورت کا ھینڈ بیگ چوری ہو گیا . اس ھینڈ بیگ میں اس کے کریڈٹ کارڈز ‘ موبائل، بٹوہ اور دوسرا ضروری سامان تھا.

بیس منٹ بعد اس عورت نے کہیں سے انتظام کرکے اپنے شوھر کو فون کرکے داستان سنائی کہ بیگ چوری ھو گیا ھے.. اس میں سب کچھ تھا.

خواتین کے بیگ

شوھر نے فورا کہا.. “ابھی دس منٹ پہلے تمہارا میسج آیا.. تم نے مجھ سے اے ٹی ایم کارڈ کا پن نمبر پوچھا جو کہ میں نے میسج کے ذریئے بتا دیا.

دونوں میاں بیوی بھاگم بھاگ بینک پہنچے تو پتا چلا کہ چور بنک سے پہلے ھی ان کی ساری رقم نکلوا چکا ھے اور اب ان کی مہینے بھر کی تنخواہ لٹ چکی ھے اور بنک کا خالی بینک اکاونٹ منہ چڑا رھا تھا.

نصیحت !!
کبھی بھی اپنے موبائل میں اپنے رشتہ داروں کا نمبر ان کے رشتے کے نام سے سیو نہ کریں جیسے ھزبنڈ ‘ وائف ‘ برادر ‘ مام ‘ فادر وغیرہ..

جب بھی ایس ایم ایس پر کچھ خفیہ معلومات کا پوچھا جائے جیسے کریڈٹ کارڈ کی انفارمیشن ‘ اے ٹی ایم پن نمبر وغیرہ ‘ پوچھنے والا کوئی بھی ھو فورا کال کرکے کنفرم کریں کہ پوچھنے والا وھی ھے جو آپ نے سمجھا.. یعنی بھائی کے نمبر سے بھائی ھی بات کر رھا ھے اور اس سے کوئی اس طرح کی بات بھی کریں جس سے آپ پہنچان سکیں کے وہ حقیقت میں آپ کے بھی بہن ہے یا آواز بدل کر کوئی اور فرد بات کر رہا ہے.

جب بھی کسی فیملی ممبر یا دوست کا ایس ایم ایس آئے کہ فلاں جگہ ملو ‘ فورا کال بیک کرکے کنفرم کریں کہ ایس ایم ایس درست شخص نے بھیجا ھے.. بنا کنفرمیشن کے کسی سے ملنے نہ جائیں.

بھلے آپ کے ساتھ ایسا پہلے نہیں ھوا ھو لیکن ایسا کسی کے ساتھ کبھی بھی ھو سکتا ھے لہذا احتیاط سے کام کریں اور اوروں کو بھی احتیاط کے لیے بتائیں