پاکستان کنگھال: ڈالر 155 پر جانے کی توقع

اردو ورلڈ نیوز – پاکستان کی کنگھال حکومت کے بے سروپا بیانات کی بنا پر ڈالر کے 155 روپے پر جانے کی توقع کی جا رہی ہے

پاکستان کی دو ماہ پرانی حکومت سے ملک سنبھل نہیں رہا. پاکستانی روپے کی قدر غیر مستحکم ہونے سے اوپن مارکیٹ میں ایک ہی روز میں 9 روپے 50 پیسے اضافے کے ساتھ ڈالر 138 روپے کا ہوگیا۔ کل بروز سوموار انٹر بینک میں ڈالر 124 روپے 25 پیسے کا تھا۔

ڈالر کی قیمت میں اضافے سے کرنسی مارکیٹ کے علاوہ ملک کی اسٹاک مارکیٹ میں بھی شدید غیریقینی کی صورتحال پیدا ہو گئی ہے

یہ بھی پڑھیں

عمران خان نے ڈالر بھیجنے کی پہلی ناکام اپیل کر بعد دوسری اپیل کر دی

شدت پسندوں کے خلاف فیصلہ کُن اقدام نہ کرنے پر پاکستان کی 30 کروڑ ڈالر امداد منسوخ: پینٹاگان

بیس ارب ڈالر قرضے کی تیاری: آئی ایم ایف چینی قرض کی ادائیگی کے لیے پاکستان کو فنڈ نہ دے: امریکہ

حکومتی وزیروں کی طرف سے دیے گئے بیانات کے بعد پیدا ہونے والی صورت حال کے بعد سرمایہ کار پاکستانی معیشت پر بھروسہ کرنے پر تیار نہیں. یاد رہے کہ پاکستان کے وفاقی وزراہ مشکل مستقبل کے مسلسل بیانات دیتے رہے ہیں.

اس وقت پاکستان کا کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ 2 ارب ڈالر ماہانہ ہے۔

پاکستانی کی کنگھال حکومت کے پاس چند دنوں کے بل چکانے کے پیسے نہ ہونے کی بدولت وزیر اعظم پاکستان عمران خان نے عجلت میں انٹرنیشنل مانیٹری فنڈ (آئی ایم ایف) سے بیل آؤٹ پیکج لینے کی منظوری دی ہے.

ایک طرف وزیر خزانہ اسد عمر کا کہنا ہے کہ آئی ایم ایف سے ایسا پروگرام لینا چاہتے ہیں، جس سے معاشی بحران پر قابو پایا جاسکے اور جس کا کمزور طبقے پر کم سے کم اثر پڑے۔

وہیں دوسری طرف بجلی، گیس اور دوسری اشیا ضرورت کی قیمتوں میں اضافہ کر دیا گیا ہے

واضح رہے گزشتہ روز وفاقی وزیر خزانہ نے اعلان کرتے ہوئے بتایا تھاکہ وزیراعظم عمران خان نے آئی ایم ایف سے فوری مذاکرات کی منظوری دے دی ہے۔اس سارے عمل کے لیے 4 سے 6 ہفتوں کا وقت درکار ہوگا اور آئی ایم ایف پروگرام کا دورانیہ 3 سال ہو گا جبکہ چند روز قبل انہوںنے اپنے بیان میں کہا تھا کہ ہمیں آئی ایم ایف کے پاس جانے کی کوئی جلدی نہیں ہے۔